45

ہاتھ دھونے کا سائینسی طریقہ

لندن: عالمی ادارہ صحت نے 6 مراحل پرمشتمل ہاتھ دھونے کا سائینسی طریقہ بیان کیا ہے اور اس کی آزمائش کے بعد معلوم ہوا ہے کہ یہ جراثیم اور بیکٹیریا دور کرنے کا سب سے مؤثر طریقہ ہے۔
اسکاٹ لینڈ میں گلاسکو کیلوڈونیئن یونیورسٹی نے مریضوں کے علاج کے بعد 42 ڈاکٹروں اور 78 نرسوں کے الکحل والے ہینڈ واش سے ہاتھوں کو دھلوایا گیا تو چھ مراحل سے ہاتھ دھونے کا طریقہ ہی بہترین پایا گیا جس میں بیکٹیریا کی اوسط تعداد (میڈین بیکٹیریئل کاؤنٹ) 3.28 سے 2.58 ہوگئی جبکہ ہاتھ دھونے کا تین مراحلی طریقہ اس کے مقابلے میں کمزور نہیں تھا لیکن اس میں کم از کم 42 سیکنڈ کا وقت لگتا ہے اور دنیا کی اکثریت اس طرح سے ہاتھ نہیں دھوتی، 65 فیصد ڈاکٹر ہی اس طرح ہاتھ دھوتے ہیں اور یہاں تک کہ تحقیقی مطالعے میں بھی تمام ڈاکٹروں نے 6 مراحل سے ہاتھ دھونے سے احتراز کیا شاید اس کی وجہ وقت بچانا تھا۔اس کے برعکس صابن کے بھرپور جھاگ سے 20 سیکنڈ تک زیادہ قوت سے ہاتھوں کو باہم رگڑنے کا طریقہ بھی زیادہ مؤثرثابت نہیں ہوا ہے۔

اب ہاتھ دھونے کا طریقہ بھی سیکھ لیجئے گا۔

1: پہلے ہاتھ گیلے کرلیجیئے اور صابن لگا کر دونوں ہتھیلیوں کو ایک دوسرے پر رگڑئیے۔
2: اب دایاں ہاتھ بائیں ہاتھ کے اوپر رکھ کررگڑیں اور انگلیوں کا خلال کیجئے اسی طرح بایاں ہاتھ دائیں ہاتھ پررکھ کر رگڑیں اورانگلیوں سے خلال کیجئے۔
3: اب دونوں ہاتھوں کو ملاکر دونوں ہاتھوں کی انگلیوں کو ایک دوسرے سے خلال کیجئے۔
4: تصویر کے مطابق انگلیوں کی پشت سے ہاتھوں کی ہتھیلیوں کو رگڑیئے اور دونوں ہاتھ سے یہ عمل دہراہئے۔
5: اب دونوں انگھوٹوں کو تصویر کے مطابق گھماکر رگڑیئے۔
6: اب ہاتھوں کو انگلیوں کو ملاکر انہیں دوسرے ہاتھ سے دائرے کی صورت میں رگڑیئے اور یہ عمل دونوں ہاتھوں سے دہرائیں۔

واضح رہے کہ عام طور پر تین مراحل میں ہاتھ دھونے کا طریقہ رائج ہے لیکن 6 مراحل سے ہاتھوں کو دھونے کے طریقے کا کوئی متبادل نہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں