norway adventure saves 44

ناروے کا مہم جو کرتب دکھانے کے دوران موت کے منہ میں جاتے جاتے رہ گیا

اوسلو: کوئی منفرد اور حیرت انگیز کرتب دکھا کر ہیرو بن جانے کی خواہش میں کبھی کبھار مہم جو کو زندگی سے ہاتھ دھونے پڑجاتے ہیں لیکن کبھی قدرت مہربان ہو توانہیں زندگی بھی مل جاتی ہے ایسی ہی ایک کوشش میں ناروے کا ایک مہم جو اپنی بہادری دکھانے کوشش میں 4 ہزار فٹ نیچے گرگیا لیکن اس کے باوجود خوش قسمتی سے پیراشوٹ کھولنے میں کامیاب ہوگیا اور اس طرح وہ موت کے منہ میں جاتے جاتے رہ گیا۔

ناروے کے بیس جمپر اور خطروں سے کھیلنے والے مہم جو رچرڈ ہین رکسن نے ایک اور خطرناک مہم کا فیصلہ کیا اور ملک کے 4 ہزار فٹ بلند پہاڑ کے کنارے پر بغیر جالی والے فٹ بال گول پوسٹ  لگا کر قلابازیاں کھانے کا کرتب دکھانے کا اعلان کردیا۔ اس سمر سیٹ مہم کے تمام انتظامات مکمل ہوگئے جب کہ لوگ اس خطرناک کرتب کو دیکھنے کے لیے چند لمحوں کے لیے ساکت ہوگئے اور جب رچرڈ نے اپنے کرتب کا آغاز ہی کیا کہ اچانک پول اکھڑ گیا اور وہ 4 ہزار فٹ بلندی سے نیچے کی طرف گرنے لگا جسے دیکھ کر وہاں موجود لوگوں کو یقین ہوگیا کہ رچرڈ کی موت یقینی ہے۔

لیکن کہتے ہیں کہ جسے اللہ رکھا اسے کون چکھے، رچرڈ ایک چٹان سے ٹکرانے سے بال بال بچا اور زمین پر پہنچنے سے قبل ہی وہ اپنا پیرا شوٹ کھولنے میں کامیاب ہوگیا جسے بعد میں ہیلی کاپٹر کی مدد سے ریسکیو کرلیا گیا اور جب اسے واپس پہاڑ پر لایا گیا تو لوگ یہ دیکھ کر حیرت زدہ رہ گئے کہ رچرڈ کو معمولی زخم بھی نہ آیا تاہم موت کے خوف سے وہ کچھ لمحوں تک اپنے حواس میں نہ آسکا۔ رچرڈ کا اپنے اس تجربے پر کہنا تھا کہ جب اس نے اپنے اس واقعہ کی ویڈیو دیکھی تو وہ پوری رات بچوں کے ساتھ گانے گاتا اور کتابیں پڑھتا رہا تاکہ اس منظر کو اپنے ذہن سے محو کرسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں